معذور افراد کےلئے کم ترین شرح پر قرضہ

state-bank.jpg

مرکزی بینک نے نے معذور افراد کو 5 فیصد کی کم ترین شرح سود پر رعایتی قرض دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ بینک نے معذور افراد کے لیے چھوٹے کاروبار کی مالی معاونت اور کریڈٹ کی ضمانت کی سہولت کی اجازت دے دی۔

گورنر اسٹیٹ بینک طارق باجوہ نے اس بات کا اعلان قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ، مالیات اور اقتصادی امور کے اجلاس میں کیا۔

اسٹیٹ بینک، ڈیولپمنٹ فنانس انسٹیٹیوشنز (ڈی ایف آئیز) اور بینکوں کو رقم دینے کے لیے نئی شرائط پر 100 فیصد سے زائد قرضہ فراہم کرے گا، جس سے معذور افراد زیادہ سے زیادہ 5 سال کی مدت کے لیے 15 لاکھ روپے تک قرض حاصل کریں گے جس میں 6 ماہ کا اضافی وقت بھی شامل ہوگا۔

گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ ملک میں معذور افراد کی مجبوری کو سمجھتے ہوئے اور اقتصادی معاملات میں ان کی شمولیت نہ ہونے کی وجہ سے درپیش نقصانات کو مدِ نظر رکھتے ہوئے اسٹیٹ بینک نے ترجیحی ترقیاتی شعبے میں خصوصی افراد کے لیے اسکیم مختص کی ہے۔

Share this post

PinIt

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

scroll to top